49

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان حتمی معاہدہ آج متوقع

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان آج مذاکرات کا دور ہو گا جس میں قرض معاہدے کو حتمی شکل دی جائے گی۔

بجلی اور گیس مہنگی، 350 ارب روپے کی سبسڈی ختم ،حکومت ڈالر کی قیمت کو کنٹرول نہیں کرے گی ، تنخواہ پر ٹیکس کی شرح کو جون 2018 کی شرح سے لاگو کیا جائے گا، ذرائع

تفصیلات کے مطابق پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان حتمی معاہدے پر دستخط آج ہونے کا امکان ہے،حکومت پہلے ہی آئی ایم ایف کی شرائط تسلیم کرنے کا عندیہ دے چکی یے آئندہ مالی سال کے لیے مالی خسارہ 11 ارب ڈالر رہے گا، شرح سود 200 بیسز پوائنٹ تک بڑھا دی جائے گی۔

زائع کے مطابق پاکستان کو3سال کےلئے 6 ارب 40 کروڑ ڈالر کا قرض ملنے کی توقع ہے ۔

ذرائع کے مطابق قرض معاہدے کی شرائط پر پاکستان عمل درآمد کا پابند ہوگا جسکی رو سے بجلی و گیس کی قیمتیں مرحلہ وار بڑھائی جائیں گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بجٹ خسارے کو 4.5 فیصد تک محدود کیا جائے گا، شرح سود 12 فیصد تک لانے کے علاوہ اگلے بجٹ میں 700 ارب روپے کے نئے ٹیکسز لگائے جائیں گے۔

حکومت ڈالر کی قیمت کو کنٹرول نہیں کرے گی اور تنخواہ پر ٹیکس کی شرح کو جون 2018 کی شرح سے لاگو کیا جائے گا۔ 

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ خسارے میں چلنے والے اداروں کی نجکاری کا پلان آئی ایم ایف کو دیا جائے گا اور توانائی سمیت متعدد شعبوں میں سبسڈی ختم کی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں